Education

#مجرم_کون *#زینب_کا_قتل* *#لبرل_حکومت* *#پورن_میڈیا* ✍عامر القادری ایتھنز یونان

جب تم بے حیا ھوجاو تو جو چاھےکرو ۔ الحدیث*

درجہ بدرجہStep by Step پورن ایبل کی طرف بڑھتا موجودہ پاکستانی پرنٹ اور الیکٹرانک میڈیا یعنی ٹی وی چینلز موجودہ حکومت کی سرپرستی و اجازت سے چل رھے ھیں۔ پیمرا سمیت تمام سرکاری وغیر سرکاری ادارے حکومتی اجازت سے ھی کام کرتے ھیں۔

*#پاکستانی_چینلز_اور_اس_کی_آزادی_کی_تاریخ*
پاکستان میں 1965 میں ٹی وی آیا ۔ بھٹو دور میں ٹی وی اور سینما کو مکمل شیطانی آزادی تھی یہانتک کہ اس دور میں ایسی گندی فلمیں بنی جو ضیاء دور میں ریلیز نہیں ھوئی تھی یہ آزادی جنرل ضیاء الحق نے اپنے دور میں ختم کر دی اور میڈیا کو چھوٹا دوپٹہ اوڑھا دیا۔ 1986 میں 3000 V.C.R کے لائسنس دئیے گئے بعد میں آنے والی حکومت نے بغیر لائسنس کے V.C.R رکھنے کی اجازت دے دی ۔

*#فحش_فلموں_کی_آمد*
پاکستان میں V.C.RR کے ساتھ ھی پورن فلمیں ملک میں آئیں ۔ جو تمام ویڈیو سینٹرز پر دستیاب ھوتیں اور تا حال دستیاب ھیں لیکن چوری چھپے ملتی ھیں ۔ اب تو انٹرنیٹ کے ذریعے سب دستیاب ھے۔ ادارے چاھیں تو اس کو بلاک کیاجا سکتا کچھ سائٹیں بلاک کی بھی ھیں۔ 1992۔93 میں پاکستان سینما گھروں میں سر عام چند منٹ کی پورن فلمیں چلتی تھیں جن کے پوسٹرز پر (صرف بالغوں کیلئے) درج ھوتا تھا۔ محترمہ بے نظیر بھٹو مرحومہ مغفورہ اور جناب نواز شریف صاحب علیہ ما علیہ نے ان کو اپنے دور میں بند نہیں کیا تھا ۔ 1999میں *مسٹر جنرل پرویز مشرف* نے نت نئے چینلز کو لائسینس دئیے میڈیا کو بے لگام کیا ۔اور بے حیائی کا نیا سیلاب اُمنڈ آیا۔ لو اسٹوریز کے ڈرامے چلے تو *#شیلا_جوان_ھوئی* *#منی_بدنام_ھوئی* *#کھا_لےانگور_تے_چوپ_لے_انبیاں* اور *#منجھی_وچ_ڈانگ_پھری* تو صرف یکم جنوری 2012 سے 25 جنوتی 2013 تک میں 17 ھزار لڑکیاں گھروں سے بھاگیں جن میں 4 ھزار شادی شدہ تھیں ۔ 2016 میں بچوں بچیوں لڑکوں لڑکیوں کو ھراساں کرنے ان کے ساتھ زیادتی کے 4 ھزار سے زائد کیس رجسٹر ھوئے جو اصل تعداد کا چند فیصد ھے ۔ مشرف صاحب تو گئے لیکن بے حیائی چھوڑ گئے۔
آپ علیہ ما علیہ کے بعد *#پیپلز پارٹی* کی حکومت نے اس آزادی کو برقرار رکھا اب *#ن_لیگ* کی حکومت میں بھی میڈیا پر مکمل شیطانی آزادی ھے بلکہ مزید بےحیائی پھیل رھی ھے ۔ سننے میں آیا ھے کہ مارننگ شوز 2017میں ناچ رنگ وہ بھی انتھائی فحش دیکھایا جا رھا ھے۔اور مقابلہ کرایا جا رھا ھے۔
اب میڈیا پورن کی طرف کیوں نا بڑھتا کہ موجودہ حکومت کے سابق #نا_اھل_وزیر_اعظم کا نعرہ ھے پاکستان کا #مستقبل #لبرل ھو گا۔ (یعنی #اسلامی_جمہوریہ نہیں ھو گا) اور یہ واقعتا حقیقتا ملک کو *#لبرل* بنانے کیلئے عملاً رات دن ایک کر کے کوشش کر رھے ھیں ۔ اب ان کے چھوٹوں کو *#زینب* پر *مگر مچھ* کے آنسو بہانے اور سوشل میڈیا پر واویلا مچانے کا کوئی حق نہیں جن کے بڑے دلوں کے وزیر اعظم ملک کو لبرل بنانے اور *رانا ثناء اللہ* اور *طلال چوھدری* زینب کیس پر انتہائی گرا ھوا بیان دے چکے۔ کہ *ایسا ھوتا رھتا ھے۔* شیم شیم شیم ۔۔۔۔ لیکن شرم ھو تو آئے۔

*#میڈیا_بند_کرنا*

سوشل و الیکٹرانک میڈیا کو اگر *#فیض_آباد* *دھرنے* میں *#شب خون* مارنے کیلئے کہ کوئی دیکھے نا ایک سیکنڈ میں بند کرایا جا سکتا ھے۔ اور 455 لاشیں گرائی جا سکتی ھیں ۔(یہ وہ ھی حکومت ھے جن کو فیس بک پر گستاخانہ پیج بلاک کرنے کو کہا گیا تو اس نے نہیں کیے تھے لیکن فیض آباد دھرنے کے مسئلے پر دو سیکنڈ میں میڈیا بند کر دیا اور اس سےپہلے ممتاز قادری کے جنازے کی کوریج دیکھانے کی پابندی عائد کر دی گئی۔ اوردیکھانے پر 92 چینل کو 5 کروڑ جرمانہ کیاگیا۔
اور اب *#لبیک_یا_رسول_اللہ* کے نعرے پر میڈیا پر پابندی ھے کہ یہ نام بھی نہیں لیا جائے گا ( ویڈیوثبوت موجود) ۔
ایسےھی میڈیا کی بے حیائی کو بھی ختم کرنے کیلئے ایک آرڈر کی ضرورت ھے لیکن یہ *#لبرل_ازم* کی حمایت کا نعرہ لگا چکے اب پابندی کیسے لگائیں گورا سرکار ناراض ھو گا
اب تو گھر 🇵🇰کے نہیں رھے پھر گھاٹ 🇬🇧کے بھی نہیں رھیں گے ۔
*#لبرل_ازم_کیا_ھے ؟*
یاد رکھیں جو کچھ بے حیائی میڈیا پر جاری ھے یہی لبرل ازم ھے *(لبرل ازم میں شخصی آزادی بھی ھوتی ھے کہ جیسے چاھو زندگی گزارو۔بغیر شادی کےرھو۔بغیر نکاح بچےپیدا کرو ھم جنس پرستی مرد کا مرد عورت کا عورت سے نکاح ناچ گانا عریانی جو چاہو پہنو بلکہ اتار کر گھومو ان تمام شیطانیت کو حکومتی سطح پر تحفظ فراھم کیاجاتا ھے لیکن بے غم رھیں سب آھستہ آھستہ لایا جا رھا ھے۔ اللہ کی پناہ)* میڈیا بھی مادرپدر آزاد ھوتا ھے جو چاھے دیکھائے اور وہ دیکھا رھا ھے۔

*#بدی_کے_محرکات*
اچھائی یا برائی کے عام ھونے میں اصل محرکات کو دیکھا جاتا ھے بدی کے پھیلنے میں *لبرل حکومت کا اجازت یافتہ میڈیا* کا بنیادی کردار نہایت گھناونا ھے میڈیا پر بےحیائی دیکھ دیکھ کر نوجوانوں میں طبیعت ہیجان بڑھتا شہوت بھڑکتی ھے تو چاروناچار زینب جسی بچیوں کے واقعات و حادثات ھونا لازمی امر ھے۔
*#انٹرنیٹ_کیفے*
انٹر کیفے کھلے تو ان میں بھی یہی سب موجود تھا اور علاقے کی پولیس ان سے بھتہ وصول کرتی رھی *سر_عام* کی ٹیم کے پروگرام اس پر شاھد ھیں لیکن کاش وہ اپنے چینلز پر بھی پروگرام کرے۔
*#اسکول_کالج*
اسکولوں کالجوں میں بھی *#ماحول* اور *#سلیبس* ایسا لایا جا رھا ھے کہ حیاء بچوں کے اذھان سےختم کر دی جائے اسکولوں میں ناچ گانا عام کیا جا رھا ھے اور سلیبس میں بھی ایسی حیاء باختہ کہانیاں لائی جا رھی ھیں کہ نوجوان دین سے دور ھو کر شخصی آزادی اور *#کلچرل_شوق* کے نام پر بے حیاء بن رھا ھے۔ یاد رکھیں ایسے ماحول کے اسکولوں میں اپنے بچوں کو پڑھانا شرعا ناجائز و حرام ھے ۔ سکولوں کے ذریعے دین سے کیسے دور کیا جاتا ھے #کلیسا_کا_نظام_تعلیم نامی کتاب کا ضرور مطالعہ کیجئے ۔

*#منافق_حکومت_اور_میڈیا*
حکومتی اھلکار اور منافق میڈیا کی پکار سنی جا سکتی ھے کہ زینب کے ساتھ ظلم ھوا لیکن ان حرام خوروں منافقوں کو کون بتائے کہ یہ سب تمھارا ھی کیا دھرا ھے تمھاری ھی پھیلائی بے حیائی کی وجہ سے ھو رھا ھے۔

*#غافل_والدین_کی_ذمہ_داری*
جب والدین خود یہ بے حیائی سے بھرے چینل گھروں میں لگائیں گے تو 177 ھزار لڑکیاں گھروں سے بھاگنے جیسے واقعات خودبخود رونما ھونگے ایسے بے حیائی کے چینل والی کیبل لگانے والے والدین بھی بے حیائی کو اپنی اولاد کے اذھان میں ٹھونستے ھیں۔ اور پھر رزلٹ آوت ھونے کی صورت میں روتے ھیں ۔
*#عوام_کا_کردار*
زینب کی جان کو رونے والو تم خود ھی چینل کھولنے والے ھو تمھیں کیبل آپریٹر ھو تمھیں شہر شہر گاوں گاوں گھر گھر میں کیبل کا شیطانی جال پھیلانے والے ھو اب کیبل کا رزلٹ آوٹ ھونا شروع ھوا ھے تو خود ھی روتے بھی ھو
تم خود ھی مجرم ھو اور خود ھی سراپا احتجاج بھی ۔۔۔ واہ کیا کمال کی تمھاری منافقت ھے۔۔۔۔ واہ کیا کمال کے منجھے ھوئے اداکار ھو۔
*#اسلام_میں_جنسی_تعلیم
مغربی ممالک میں بچوں کو جنسی تعلیم دی جاتی ھے لیکن وھاں اس کے باوجود ایسے واقعات ھو رھے ھیں ۔ اسلام کہتا ھے بچے سات سال کے ہو جائیں تو بستر علیحدہ کر دو۔ بچی 9 سال کی ھو جائے تو اسے باھر مردوں میں مت بھیجھیں۔ بچے بڑے ھو جائیں تو نا محرم عورت سے دور رکھا جائے ایسے ھی بیٹی کو نا محرم مرد سے دور پردے میں رکھا جائے۔ لباس مکمل پہنایا جائے ایسا نا ھو کہ لباس پہنے ننگی ھو اور ایسے لباس سے احادیث میں منع کیا گیا اور اسے قرب قیامت کی نشانی بتایا گیا ۔
جو اسلام بڑے بہن بھائیوں کو ایک چارپائی پر بیٹھنے کی اجازت نہیں دیتا وہ نامحرموں سے گھلنے ملنے کی اجازت کیسے دے سکتا ھے۔ دین اسلام انہیں باتوں پر عمل میں بھلائی ھے و بس

*#معاشرے_میں_بہتری_کیسے_لائی_جائے*
زینب پر رونے دھونے احتجاج سے کچھ نہیں ھونے والا یہ بغیر کتا نکالےکنویں سے چالیس ڈول پانی نکالنے والی بات ھے۔
جب تک گھر گاوں شہر ملک سے اس پورن میڈیا کو نہیں نکالو گے زینبیں لٹتی رھیں گی
*#جاگو*
انفرادی طور پر سب کو اپنے اپنے حصے کا کام کرنے کی ضرورت ھے۔ ورنہ کل کلاں تمھاری زینب ضرور لٹے گی ۔

اے #والدین اے #عوام اے #بھائی اے #بہن اے #صحافی اے #میڈیا_مالکان اے #سوشل_اکاونٹ چلانے والو اور اے #حکومتی_عہد دارو اور اے #وزیرو #مشیرو #کیبل_مالکان پڑھو تمھارا ربّ کیا ارشاد فرماتا ھے ۔
سورہ النور ایت نمبر 19
اِنَّ الَّـذِيْنَ يُحِبُّوْنَ اَنْ تَشِيْعَ الْفَاحِشَةُ فِى الَّـذِيْنَ اٰمَنُـوْا لَـهُـمْ عَذَابٌ اَلِيْـمٌ فِى الـدُّنْيَا وَالْاٰخِرَةِ ۚ وَاللّـٰهُ يَعْلَمُ وَاَنْتُـمْ لَا تَعْلَمُوْنَ (19)
ترجمہ: وہ لوگ جو چاہتے ہیں کہ مسلمانوں میں برا چرچا ( فحاشی ، بے حیائی ) پھیلے ان کے لیے دردناک عذاب ہے دنیا اور آخرت میں اور اللہ جانتا ہے اور تم نہیں جانتے ۔

*#کفر خوش نہیں ھو گا*
اےحکومتی کارندو اور میڈیا مالکان جن کو خوش کرنے کیلئے تم ملک خدادا میں بے حیائی پھیلا رھے ھو وہ تم سے راضی نا ھونگے مگر کفر پر۔
سورہ البقرہ آیت نمبر 120
*وَلَنْ تَـرْضٰى عَنْكَ الْـيَهُوْدُ وَلَا النَّصَارٰى حَتّـٰى تَتَّبِــعَ مِلَّـتَـهُـمْ ۗ* قُلْ اِنَّ هُدَى اللّـٰهِ هُوَ الْـهُـدٰى ۗ وَلَئِنِ اتَّبَعْتَ اَهْوَآءَهُـمْ بَعْدَ الَّـذِىْ جَآءَكَ مِنَ الْعِلْمِ ۙ مَا لَكَ مِنَ اللّـٰهِ مِنْ وَّّلِـيٍّ وَّلَا نَصِيْـرٍ (120).

ترجمہ:
*___اور ہرگز تم سے یہود اور نصاریٰ راضی نہ ہوں گےجب تک تم ان کے دین کی پیروی نہ کرو___* تم فرما دو اللہ ہی کی ہدایت ہدایت ہے اور (اے سننے والے کسے باشد) اگر تو ان کی خواہشوں کا پیرو ہوا بعد اس کے کہ تجھے علم آ چکا تو اللہ سے تیرا کوئی بچانے والا نہ ہو گا اور نہ مددگار۔ *#اسلام_میں_جنسی_تعلیم مغربی ممالک میں بچوں کو جنسی تعلیم دی جاتی ھے لیکن وھاں اس کے باوجود ایسے واقعات ھو رھے ھیں ۔ اسلام کہتا ھے بچے سات سال کے ہو جائیں تو بستر علیحدہ کر دو۔ بچی 9 سال کی ھو جائے تو اسے باھر مردوں میں مت بھیجھیں۔ بچے بڑے ھو جائیں تو نا محرم عورت سے دور رکھا جائے ایسے ھی بیٹی کو نا محرم مرد سے دور پردے میں رکھا جائے۔ لباس مکمل پہنایا جائے ایسا نا ھو کہ لباس پہنے ننگی ھو اور ایسے لباس سے احادیث میں منع کیا گیا اور اسے قرب قیامت کی نشانی بتایا گیا ۔ جو اسلام بڑے بہن بھائیوں کو ایک چارپائی پر بیٹھنے کی اجازت نہیں دیتا وہ نامحرموں سے گھلنے ملنے کی اجازت کیسے دے سکتا ھے۔ دین اسلام انہیں باتوں پر عمل میں بھلائی ھے بس.

*اللہ پاک ھمیں سمجھنے اور عملا اس بے حیائی کو اپنی ذات گھر علاقے سکول شہر ملک سے سے دور کرنے کی توفیق عطا فرمائے۔*

*بات سمجھ آئی ھےتو عمل کی نیت کے ساتھ سب دوستوں میں شیئر کیجئے*
*#اسلامی_جمہویہ_پاکستان*

Comments

comments

Click to comment

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Most Popular

To Top