Facebook

پوری بستی دو پہاڑ کے نیچے دب گئی اس آرٹیکل کو ضرور پڑھیں دوستوں کے ساتھ ضرور شیئر کریں

حضرت مولانا محمد انعام الحق قاسمی کہتے ہیں کہ ہمارے ایک قریبی تعلق والے دوست ہیں، ان کی کزن کے ساتھ ایک عجیب واقعہ پیش آیا، وہ ماشاء اللہ جوان العمر ہیں، ایک میجر کی بیوی ہیں، کہتی ہیں کہ میری ایک بیٹی چار سال کی ہے اور ایک بیٹا دو تین ماہ کا ہے وہ اس کا میاں اور دونوں بچے ایک ہی ڈبل بیڈ کے اوپر سو رہے تھے، وہ کہتی ہیں کہ اچانک چھوٹا بچہ ہلا جلا اور رویا، جیسے اسے فیڈ کی ضرورت ہو،گو مجھے بہت نیند آئی ہوئی تھی مگر میں ماں تھی، میں اس نیند سے اٹھی کہ میں اپنے بچے کو فیڈر دوں.اچانک میری نظر ساتھ والی دیوار پر پڑی، مجھے اس میں ایک دراڑ پڑتی نظر آئی، میں نے فوراً اپنے میاں کو جگایا کہ دیوار میں یہ کیا ہو رہا ہے؟ وہ اٹھا اور اس نے دیکھا تو وہ کہنے لگا کہ دیوار میں تو دراڑ آ رہی ہے، پھر اس نے جلدی سے بیٹی کو اٹھایا

اور میں نے چھوٹے بیٹے کو اٹھایا، جیسے ہی ہم اپنے کمرے سے باہر نکلے، پیچھے ہمارے کمرے کی چھت زمین پر آ گری، ہمارے گھر کے فرنٹ پر ایک بالکونی تھی ہم درمیان میں ایک جگہ پھنس گئے، میرے میاں نے ایک بڑی اینٹ اٹھائی اور کھڑکی کو دے ماری، جیسے ہی کھڑکی ٹوٹی تو اس نے باہر چھلانگ لگا دی اور مجھے کہا کہ جلدی سے مجھے بچے پکڑاؤ، میں نے کھڑکی میں سے اسے بیٹا پکڑایا اور اس نے لے کر زمین پر لٹا دیا، پھر بیٹی کو پکڑ کر زمین پر ڈال دیا، میرے لیے کھڑکی پر چڑھ کر اترنا ذرا مشکل ہو رہا تھا، اس نے مجھے بالوں سے پکڑ کر کھینچا اور بازوؤں سے بھی پکڑ کر کھینچا اور بالآخر جیسے ہی میں باہر آگئی، جس بالکونی میں ہم کھڑے تھے اس کی چھت بھی زمین پر آ گری، پھر میں نے بیٹے کو اٹھایا اور میرے میاں نے بیٹی کو اٹھایا اور ہم وہاں سے بھاگے، مگر ہم سے بھاگا ہی نہیں جا رہا تھا، ایسا لگتا تھا جیسے کسی نے بیس کلو کا وزن ہمارے پاؤں کے ساتھ باندھ دیا ہے،پاؤں اٹھانا بھی مشکل تھا،

وہاں زمین کی گریوی ٹیشنل فورس (کشش ثقل) بڑھ چکی تھی، وہ کہتی ہے میرا خاوند میجر تھا، وہ مجھے کہہ رہا تھا کہ آج تو قدم اٹھانا مشکل ہو رہا ہے، ہم وہاں سے مشکل سے پچاس قدم پیچھے ہٹے ہوں گے کہ جب ہم نے پیچھے مڑ کر دیکھا تو ہماری ساری بستی کے مکانات زمین کے اندر چلے گئے تھے، ہمیں فقط زمین نظر آ رہی تھی، کوئی مکان نظر نہیں آ رہا تھا.

..

Comments

comments

Click to comment

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Most Popular

To Top